نیب کا نواز شریف اور مریم نواز کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کی درخواست

نیب کا نواز شریف اور مریم نواز کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کی درخواست

2/14/2018 5:41:17 PM :شائع کردہ

اسلام آباد: قومی احتساب بیورو (نیب) نے سابق وزیراعظم میاں نواز شریف، ان کی بیٹی مریم نواز اور داماد کیپٹن (ر)صفدر کا نام ایگزیٹ کنٹرول لسٹ میں ڈالنے کیلئے وزارت داخلہ کو خط لکھ دیا۔ نیب ذرائع نے وزارت داخلہ کو خط لکھے جانے کی خبر کی تصدیق کی ہے۔خط میں کہا گیا ہے اس خط میں کہا گیا ہے کہ چونکہ ان تینوں ملزمان کے خلاف اسلام آباد کی احتساب عدالت میں زیر سماعت مقدمات اپنے حتمی مراحل میں ہیں، اس لیے خطرہ ہے کہ ملزمان ان ریفرنسز کے فیصلے سے قبل ہی بیرون ملک فرار ہو جائیں گے۔ پاناما لیکس سے متعلق درخواستوں پر سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں اسلام آباد کی احتساب عدالت کو نواز شریف اور ان کے بچوں کے خلاف دائر ہونے والے ریفرنس کا فیصلہ چھ ماہ میں کرنا ہے اور سپریم کورٹ کی طرف سے دی گئی ڈیڈ لائن مارچ کے دوسرے ہفتے میں ختم ہو رہی ہے۔ اس سے پہلے لاہور کے نیب آفس نے سابق وزیر اعظم اور دیگر ملزمان کے نام ای سی ایل میں ڈالنے کے لیے نیب ہیڈ کوراٹر کو خط لکھا تھا تاہم اس پر نیب نے کوئی عملی قدم نہیں اُٹھایا تھا۔ نواز شریف اور ان کی بیٹی مریم نواز نے احتساب عدالت میں دو ہفتوں کے لیے حاضری سے استثنیٰ کی درخواست بھی دائر کر رکھی ہے جس کی سماعت 15 فروری کو ہوگی۔ حکمراں جماعت کے ذرائع کے مطابق سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف اپنی اہلیہ کلثوم نواز کی عیادت کے لیے لندن جا رہے ہیں اور مریم نواز بھی ان کے ہمراہ ہوں گی۔ اس سے قبل قومی احتساب بیورو نے سابق وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا نام ای سی ایل میں ڈالنے سے متعلق وزارت داخلہ کو خط لکھا تھا لیکن متعقلہ وزارت نے اس پر کوئی کارروائی نہیں کی۔